ہمیں معلوم ہے ہم کربلا میں ہیں

تو آج کربلا کے لئے روانگی تھی۔ بغداد سے کربلا، کوفہ اور نجف اشرف کے شہر دراصل میسوپوٹیمیا کے علاقے ہیں۔ دجلہ و فرات سے مستفیذ ہونے اور اِن کی زرخیزی سے بھرپور فائدہ اٹھانے والے۔ ایک تو جگہ جگہ چیک پوسٹوں کا سیاپا۔ گاڑی رک جاتی۔ پولیس کا پورا جتھا چیکنگ کے جدید ترین…

Read more

پیٹرز برگ میں میخائل وینرا لیوچ کی کھٹی میٹھی باتیں

پیٹرز برگ کے پیٹر ہاف میں میری میخائل سے ملاقات ہوئی۔ وہ ریلنگ کے ساتھ کھڑا فن لینڈ کے پانیوں کو دیکھتا تھا۔ گورا چٹا، اُونچا لمبا، موٹا تازہ، جس نے بڑی شُستگی سے میرے پاس آ کر مجھ سے میری وطنیت کا سوال کیا تھا۔ حیرت و مُسرت سے میں نے پلکیں جھپکاتے ہوئے…

Read more

لُٹنا میرا استنبول کے کیپلی کارسی میں اور ترک پولیس کو ”سیلوٹ“۔

توپ کاپی سرائے میوزیم کی آرمینیائی طرز تعمیر کی خوبصورتیوں، پچی کاری و تزئین کاری کی ہوش رُبا رنگینیوں سے طلسم زدہ سے باہر آئے توکسی اور طرف منہ مارنے کی بجائے گرینڈ بازار کا رُخ کیا کہ لیرے ختم تھے اور گرینڈ بازار سے ملحقہ منی چینج آفس کا لڑکا انگریزی سمجھتا تھا۔

سو ڈالر کا نوٹ سوراخ سے اندر گیا۔ پیسے لئے اور ٹیکسی میں بیٹھ کر ہو ٹل آ گئے۔ ادائیگی کے لئے تہہ کیے ہوئے سارے لیرے کھولے۔ ٹیکسی ڈرائیور نے ہلکے نیلے رنگ کے ایک نوٹ کو چُھوا ”یہ تو متروک ہو چکا ہے۔ “

Read more

کشمیر اور فلسطین: یہ جامہ صد چاک بدل لینے میں کیا تھا

 کشمیر کے بدن پر زخم لگانے والے لوگ پہلے تو خود کشمیریوں کے سرکردہ لوگ ہیں۔ اسی طرح جیسے فلسطین کو بیچنے والے پہلے لوگ خود اس کے اپنے کھاتے پیتے فلسطینی تھے۔ جو صہیونیوں کے اِس پروپیگنڈے سے متاثر ہوئے تھے کہ یہ بنجر بے آباد زمین بھلا کس کام کی؟ ان زمینیوں کے…

Read more

کشمیراور فلسطین کے بدن پر پہلے زخم اپنوں کے

کشمیر کے بدن پر زخم لگانے والے لوگ پہلے تو خود کشمیریوں کے سرکردہ لوگ ہیں۔ اسی طرح جیسے فلسطین کو بیچنے والے پہلے لوگ خود اس کے اپنے کھاتے پیتے فلسطینی تھے۔ جو صہیونیوں کے اِس پروپیگنڈے سے متاثر ہوئے تھے کہ یہ بنجر بے آباد زمین بھلا کس کام کی؟ ان زمینیوں کے…

Read more

طالبان کو منانا کون سا خالہ جی کا گھر ہے

لاؤنج میں گھر کی عورتیں جو عمران خان کی عاشق، صادق اُس کی سر گرم سپوٹرز، اس کی ووٹرز، ٹرمپ کے ساتھ اُس کی میٹنگ کا حال احوال دیکھنے بیٹھی تھیں۔ اس کرشماتی لیڈر کا حامی یہ تعلیم یافتہ مڈل کلاسیا طبقہ اس کے حالیہ متعدد فیصلوں، حکومتی طورطریقوں اور بڑھتی ہوئی مہنگائی کے ہاتھوں…

Read more

گم شدہ بغداد کی کہانی: مرے بچے یہاں پر کھیلتے تھے

کاظمین کے ٹیکسی سٹینڈ پر حسب وعدہ میرا ٹیکسی ڈرائیور منتظر تھا۔ گاڑی میں بیٹھتے ہی میں نے منتدرل الزیدی Muntader۔ al۔ zaidi کی بش پر جُوتا پھینکنے والی شہرہ آفاق نظم کو پھر سُننے کی خواہش کی۔ افلاق ہنسا۔ ” بس اسے ہی سنتے جانا ہے۔ نہیں آج آپ نئی چیزیں سُنیں گی۔ “…

Read more

عراقی تیل کو طوائفوں اور فاحشاؤں سے کیوں نہ بچایا جا سکا؟

یہ 2008 ہے۔ جنگ ختم ہونے کے باوجود امریکی افواج عراق کے چپے چپے پر بیٹھی اِسے خون میں نہلا رہی ہے۔ میرا جنون جیسے مجھے اڑا کر وہاں لے گیا تھا۔ دعاؤں کے پلندے ساتھ تھے۔ شاید اسی لیے افلاق جیسا کیمیکل انجنئیر جنگ کا زخم خوردہ ٹیکسی ڈرائیور کی صورت خدانے مجھے ٹکرا…

Read more

افغان: جن کے لیے راہوں میں بچھایا تھا لہو

کیاکروں۔ ساغر صدیقی اور اس کی اس مصرعے کی حامل یہ شہرہ آفاق غزل بہت شدت سے یاد آئی ہے کہ گذشتہ رات جو کچھ اور جس صورت میں دیکھا ہے۔ اس کی اِن اشعار سے بہتر ترجمانی ہوہی نہیں سکتی۔

ہم نے جن کے لیے راہوں میں بچھایا تھا لہو
ہم سے کہتے ہیں وہی انداز وفا یاد نہیں

Read more

ہیکل سلیمانی کی تعمیر، الاقصیٰ کی بربادی اور خفیہ خزانے کی تلاش

سچی بات ہے شدید ڈپریشن والی ملکی صورت حال ہے۔ نہ اخبار پڑھنے پہ دل مائل، نہ ٹی وی دیکھنے پر آنکھیں راضی۔ ایسے میں ایک حیرت انگیز کتاب آپ کے لیے کتنی بڑی نعمت ہے۔ ”دیوار گریہ کے آس پاس“ کیا پڑھی کہ میرے تو چودہ طبق روشن ہوگئے۔ تب سوچا کہ یہ تو…

Read more