بھارت کا کشمیر کی خودمختاری پر ڈرون حملہ اور دنیا کی خاموشی

کشمیر دنیا میں وہ بدنصیب وادی ہے، جس میں گزشتہ 30 سالوں کے دوران 95 ہزار 430 کشمیری بھارتی درندگی کا شکار ہوکر یوم شہادت نوش کرچکے ہیں، تین دہائیوں میں 11 ہزار سے زائد کشمیری خواتین کو ساتھ بھارتی ہندو فوجیوں نے جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا ہے۔ ایک لاکھ کشمیریوں کے گھر مسمارکیے…

Read more

سکھر سے لاپتا معصوم بچے اور نامعلوم لاشیں

معصوم بچے فرشتوں کے مانند ہوتے ہیں۔ ان کی مسکراہٹ پھولوں کی خوشبو کی طرح مہکتی ہے، بچے جب پاپا، مما کرتے ہیں تو اس وقت کے مناظر کچھ اور ہوتے ہیں، گھر میں بچے نہ ہوں تو گھر سنسان ویران ہو جاتا ہے، آدمی جب گھر میں تھکا ہوا آتے ہے تو سب سے…

Read more

انصاف کا جنازہ ہے ذرا دھوم سے نکلے

سرزمین سندھ صوفیا کرام بزرگوں کی دہرتی ہے۔ جس نے ہمیشہ صوفی بزرگ ولی اللہ کے ساتھ عالم عامل لیڈر اور سپوت پیدا کیے ہیں جنہوں نے اپنے مثال کی قائم کی ہے۔ شاہ عبدالطیف بھٹائی، سچل سرمست، شاہ عنایت شہید، لال قلندر شھباز جبکہ سیاست میں شہید ذوالفقار علی بھٹو، محترمہ بے نظیر بھٹو،…

Read more

سیکورٹی اسٹیٹ میں مولانا فضل الرحمان کو غیر محفوظ کرنا

پاکستان سیکیورٹی اسٹیٹ ملک ہے، یہاں وزیر اعظم سے لے کر صدر مملکت، وزیر اعلیٰ سے گورنر، چیف جسٹس سے سپہ سالار اور بیوروکریسی سے پارلیمانی ممبران تک، سیاسی جماعتوں کے رہنماؤں سے مذہبی جماعتوں تک کوئی بھی ایسا شخص نہیں ہے جو بغیر سیکیورٹی کے اپنی مرضی سے کہیں جا نہیں سکتا۔ پرویز مشرف کے دور اقتدار کے بعد ملک میں بم دہماکے، قتل و غارت، ٹارگٹ کلنگ اور اغوا برائے تاوان میں نہ صرف اضافہ ہوا بلکہ عام آدمی کی زندگی بھی غیر محفوظ ہو گئی۔

Read more

مولانا فضل الرحمان آخر کیا چاہتے ہیں ؟

کہا جاتا ہے کہ مولانا فضل الرحمان بھی عجیب آدمی ہیں، اقتدار میں رہتے ہیں تو خاموش رہتے ہیں اور جب اقتدار سے باہر ہوتے ہیں تو مچھلی کی طرح تڑپتے رہتے ہیں۔ کچھ روز قبل سابق صدر پرویز مشرف نے یہاں تک کہ دیا کہ مولانا فضل الرحمن حکومت کے خلاف سازشیں کر رہے…

Read more

رمشا اور زعیم کے بعد ارشاد رانجھانی کا بے رحم قتل، اور انصاف سوال

جب قانون انصاف موجود ہو تو اپنی عدالتیں قائم کرکے ریاست کے اندر ریاست قائم کرنا کھلی دہشت گردی ہے اور ریاستی رٹ کو چیلنج کرنے کے برابر بھی ہے۔ پاکستان سمیت جیسے جیسے قومیں ترقی یافتہ ہوتی جا رہی ہیں۔ انفرمیشن ٹیکنالوجی زور پکڑتی جا رہی ہے۔ دنیا گلوبل ولیج میں تبدیل ہوگئی۔ دنیا میں جنگیں اسلحہ کی زور کے بجائے سوشل میڈیا پر پروپگینڈہ کرکے مقابلہ کیا جا رہا ہے۔ سوشل میڈیا واٹس ایپ۔ ٹویٹر۔ فیس بوک۔ انسٹاگرام نے دنیا کو ایک جال کی طرح لوگوں کو جوڑ کر رکھ دیا ہے۔

انسانوں سے انسانیت بھی دم توڑتی جا رہی ہے۔ پہلے زمانے میں لوگ جنگلات میں نکل جاتے تھے دعا کرتے تھے کہ اللہ کرے کوئی جانور سامنے نہ آجائے انسان مل جائے۔ تب دنیا میں خوف کی علامت آدم خور جانور ہوا کرتے تھے۔ ہم بچپن میں اپنے والدین یا بزرگوں سے جب رات کو سوتے وقت کہانیاں سنتے تھے وہ ساری فرضی کہانیاں انسانیت پر مبنی ہوتی تھی۔

Read more

تحریک انصاف کی حکومت اور انصاف کا جنازہ

یہ پاکستان ہے۔ یہاں کسی کے ساتھ، کسی بھی وقت، کچھ بھی ہو سکتا ہے۔ ساہیوال جیسے واقعات ایک دو نہیں اس وطن عزیز میں سینکڑوں رونما ہوئے ہیں جہاں نہتے شہریوں کو جعلی مقابلوں میں موت کے گھاٹ اتار دیا گیا ہے۔ لیکن اکثر واقعات اس وجہ سے دب گئے کہ مرنے والے دہشت…

Read more