ناران سے بابوسرٹاپ، جھیلیں اور جھرنے

ہمارا آج ناران میں آخری دن تھا اور وادی کاغان کے بلند ترین درے اور آخری مقام بابو سر ٹاپ جانے کا پروگرام تھا۔ ہم صبح آٹھ بجے ناران سے نکل گئے تھے۔ اگرچہ بابو سر جانے کے لئے آپ اپنی گاڑی بھی استعمال کر سکتے ہیں اور اکثر لوگ اپنی ہی گاڑیوں پرجاتے ہیں…

Read more

ملکہ پربت اور دس ہزار فٹ بلند کچّی سڑک

ناران کے گنجان آباد بازار سے نکل کر پل کراس کرتے ہوئے سیف الملوک ندی کے بائیں ہاتھ پہاڑ کے دامن کے ساتھ ساتھ ایک سنگل روڈ جھیل کو جاتی ہے۔ سڑک کے کنارے دور تک نئے ہوٹل بن گئے ہیں اور بہت سارے زیر تعمیر ہیں۔ سڑک جگہ جگہ سے ٹوٹ پھوٹ کا شکار…

Read more

ٹراوٹ مچھلی، طالبان اور سفید دیو

شمالی علاقہ جات میں جا کر بھی جس نے ٹراوٹ مچھلی نہیں کھائی گویا اس نے شمالی علاقہ جات، خاص طور پر ناران، سوات اور نیلم ویلی کی بے قدری کی۔ یہ چھوٹے سائیز کی مچھلی جو صرف ٹھنڈے پانی میں رہتی ہے ذائقے اور طاقت میں لا جواب ہے۔ ٹراوٹ مچھلی کی پاکستان میں…

Read more

جب ناران پریوں کا مسکن تھا

کیوائی سے کوئی پانچ کلومیٹر آگے پارس نام کا ایک چھوٹا سا سٹاپ آتا ہے۔ یہاں بھی کافی ٹورسٹ دم لینے کو رکتے ہیں کہ چائے پانی کرلیں۔ ہم بھی یہاں کچھ دیر کو رکے تھے۔ یہاں سے ایک بار دوستوں کے ساتھ جیپ لے کر شاران گئے تھے۔ اتنا خوبصورت جنگل میں نے پہلے…

Read more

کاغان کے مسافر

شاہ اسمٰعیل کی قبر سے واپس آیا تو بچّے پریشان تھے، کہ بغیر بتائے نکل آیا تھا اور موبائل بھی کمرے میں چھوڑ آیا تھا۔ ہوٹل کے لان میں ایک فیملی اپنا ناشتا بنا رہی تھی۔ ان کے بچے اوپن ائیر میں ناشتا بننے کے عمل سے اور خوشبودار دھویں سے محظوظ ہو رہے تھے۔…

Read more

دریچے:مسافر کاغان کے

میاں جی سے کھانا کھا کر نکلے تو چار بج چکے تھے۔ ٹریفک اسی طرح چیونٹی کی رفتار سے چل رہی تھی۔ میاں جی سے تھوڑا سا آگے ایک میکڈونلڈ بھی کھل گیا ہے۔ اس کی لوکیشن بھی اچھی ہے اور خاصا وسیع ہے۔ میکڈونلڈ چھوٹو کی فیورٹ جگہ ہے، دیکھتے ہی اس کی رال…

Read more

دریچے: سفر سے جڑے سفر

خانیوال سے حویلیاں، شاہ مقصود انٹر چینج تک تقریباً چھ سو کلومیٹر، آدھا گھنٹہ بھیرہ رکنے کے باوجود، چھ گھنٹے میں طے کر لیا۔ شاہ مقصود انٹر چینج سے جیسے ہی باہر نکلے، دوطرفہ ٹریفک اور ٹوٹی سڑک نے ہماری سپیڈ کو بریک لگادیے۔ اس دن غیر معمولی طور ٹریفک زیادہ تھی یا وہ روز…

Read more

دریچے: سفر سے جڑے سفر

یوں تو زندگی ایک سفر ہی ہے۔ انسان ماں کی گود سے لحد تک سفر ہی تو کرتا ہے۔ یہ سفر خوشگوار بھی ہو سکتا ہے اگر راستے میں سایہ میسر ہو۔ ماں اور باپ ایک گھنے سایہ دار درخت کی طرح ہوتے ہیں۔ آپ ان کے پتے توڑ لیں، ٹہنیاں کاٹ لیں، یہ آپ…

Read more

بکرا کلچر

پاکستان میں ہیروئن اور کلاشنکوف کے بعد سب سے زیادہ مقبولیت بکرا کلچر کو ملی ہے۔ اس کلچر کی بقا اور ترقی کے لئے لاکھوں بکرے روزانہ اور کروڑوں بکرے سالانہ اپنی جان کا نذرانہ پیش کرتے ہیں۔ قصاب کی دکان پر یہ بکرے اپنی کھال اترواکر الٹے لٹکے ہوتے ہیں، ان بکروں کے سپئیر…

Read more

میں ماں بننا چاہتی ہوں

شمّی ایک بدکردار لڑکی تھی، یا اس کی شہرت ایسی تھی۔ مشہور ہونے والی لڑکیوں کا کردار کسی نہ کسی وجہ سے مشکوک ہی رہتا ہے۔ وہ بھی شاید مشکوک کردار کی حامل لڑکی تھی۔ وہ میرے ہسپتال میں نرس دائی لگی ہوئی تھی۔

یہ ایک چھوٹا دیہاتی ٹائپ ہسپتال تھا۔ شمّی کے علاوہ اس ہسپتال میں ایک لیڈی ڈاکٹر اور ایل ایچ وی کے علاوہ سارا عملہ مرد حضرات پر مشتمل تھا۔

Read more