اب سنگ مداوا ہے اس آشفتہ سری کا

استعفا تو میں بھیج چکا تھا، لیکن مایا نے میرا استعفا آگے نہیں بڑھایا۔ یہ بات مجھے کچھ دنوں بعد معلوم ہوئی۔ میں ڈراما سیریل ’’گردش‘‘ کی رِکارڈنگ میں مصروف تھا، اور مجھے آفس سے کالیں آ رہی تھیں۔ کال کرنے والا ایک سینیئر پروڈیوسر تھا، جس نے میرے اے آر وائے آنے کے بعد…

Read more

شکیل عادل زادہ: جن کے ہونے سے بہت کام ہمارے نکلے

    ستمبر اکتوبر 2007 میں میری بیگم کی پوسٹنگ کراچی میں ہو گئی۔ مجھے بھی کراچی شفٹ ہونا پڑا۔ ایک وسیلے سے اے آر وائے ون ورلڈ میں ملازمت کی پیش کش ہوئی جسے میں نے یہ کَہ کر ٹھکرا دِیا، کِہ میری فیلڈ انٹرٹینمنٹ ہے، نیوز نہیں۔ سب دوستوں کا کہنا تھا، مجھے…

Read more

اے آر وائے ون ورلڈ اور کچھ باتیں مایا میم صاحب کی

ایک دِن کسی کام سے اِڈٹنگ رُوم کے سامنے سے گزرا تو انیق احمد نے مجھے آواز دے کے بلا لیا۔ میں اِڈٹنگ رُوم میں گیا تو اُٹھ کھڑے ہوئے۔ کہنے لگے ’’آغاز‘‘ کا ’پرومو‘ فائنل کر رہا ہوں، دیکھ کے بتاو اس میں کوئی کمی تو نہیں ہے۔ میں نے پرومو دیکھ کے جو…

Read more

صحافی کے اوقات اور سیٹھ میڈیا کی پالیسی

ہم اسٹوڈیو میں تھے، کِہ جونھی آخری گیند پھینکی جائے، شو کا آغاز کر دیں۔ پاکستان کے وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی تھے، انھوں نے قوم کو خوش خبری دی تھی، کِہ ورلڈ کپ فائنل کے روز ملک میں بجلی کی لوڈ شیڈنگ نہیں ہو گی۔ میں نے بادامی کو شو سے پہلے سمجھا رکھا…

Read more

یہ میں ہوں اور بس یہی کچھ ہوں

تین چار سال قبل دوستوں کی ایک محفل میں یہ سوال رکھا گیا، کِہ کتاب لانا کیوں ضروری ہے۔ ایسے میں ایک دوست نے مجھ سے کہا، کہ تم اپنے ڈراموں کی کتاب کیوں نہیں چھپواتے؟ ’’ڈرامے کون پڑھتا ہے؟‘‘ میرا یہ پوچھنا تھا۔ اسکرین کے لیے لکھے گئے سیریل یا فلمیں بھلا پڑھنے کی…

Read more

ورلڈ کپ: شارجہ، سٹہ، میں اور جھوٹی باتیں

عبد القادر چیف سلیکٹر تھے۔ یونس خان پاکستان کرکٹ ٹیم کے کپتان۔ یاد نہیں رہا، ٹی 20 ورلڈ کپ 2009ء کا وہ کون سا میچ تھا، جس میں پاکستان کو شکست ہوئی تھی، اور یونس خان کے ٹی 20 کھلائے جانے پر اعتراضات بڑھ گئے تھے۔ نیز عبد القادر کی ٹیم سلیکشن پر تنقید ہوئی…

Read more

کیا افغان نمک حرام ہیں؟

نائن الیون کے مہینا ڈیڑھ بعد، جنوب ایشیا میں بھائی چارے کے لیے کام کرنے والی ایک این جی او کی وساطت سے بھارت یاترا کا موقع ملا۔ امرتسر کے قریب ڈھڈیکی میں لالہ لاج پت رائے کی حویلی میں مہمانوں کو ٹھیرایا گیا۔ تین روزہ اکٹھ کی سب ثقافتی تقریبات وہیں ہونا تھیں۔ اس میں پہلی بار افغانستان کو بھی نمایندگی دی گئی تھی۔

باقی تو سب نے خوب آو بھگت کی، لیکن پہلی ہی رات افغان بھائیوں نے پاکستانی وفد کے چند ارکان کی سر زنش کی، کہ مسلمان ہو کے تم وہاں موجود عورتوں سے گھل مل کیوں گئے ہو، ان سے ہنس ہنس کے باتیں کیوں کرتے ہو۔ تفصیل میں جائے بغیر اتنا کہنا ہے، کہ یہ اُن کا زیرِ ناف حملہ تھا۔

Read more

ورلڈ کپ: ظہیر عباس، میں اور جھوٹی باتیں

’’اسپورٹس روم لائیو‘‘ ٹی 20 اسپیشل (ورلڈ کپ 2009ء) میں، آصف اقبال کے ساتھ دوسرے مبصر معروف ٹیسٹ کرکٹر ظہیر عباس تھے۔ میں نے ظہیر عباس کو ان کے آخری دور میں کھیلتے دیکھا ہے، بس دھندلا سا یاد ہے. پی ٹی وی سے نشر ہونے والا ان کا وہ انٹرویو بھی کچھ کچھ یاد…

Read more

ورلڈ کپ: مایا، آصف اقبال، میں اور جھوٹی باتیں

This entry is part 2 of 2 in the series ورلڈ کپ کی یادیں

ٹی 20 ورلڈ کپ 2009 کی کوریج پر ہمارے شو کا ٹائٹل “اسپورٹس روم لائیو” تھا۔ میزبان اے آر وائے نیوز کے نیوز کاسٹر وسیم بادامی تھے۔ دوسرے یا تیسرے روز میں نے بادامی سے پوچھا، آپ کا یہ چشمہ، نظر کا ہے؟ تو بادامی نے کہا، نہیں۔ وہ چہرے مہرے سے نو عمر دِکھتے ہیں، تو اپنی عمر سے زرا بڑا دکھائی دینے کے لیے چشمہ لگاتے ہیں۔

Read more

ورلڈ کپ: آصف اقبال، میں اور جھوٹی باتیں

کرکٹ کو میں کچھ عرصے سے فالو کرنا چھوڑ چکا تھا۔ اس کی ایک خاص وجہ ہے، جس کا بیان یہاں لازم نہیں۔ کس ملک کی نیشنل ٹیم میں کون سے پلیئر ہیں، ٹورنا منٹ کے لیے کون سی ٹیم فیورٹ ہے، مجھے معلوم نہیں تھا۔ 4 جون 2009 کی شام مجھے کہا گیا تھا،…

Read more