ریڈیو کے عالمی دن پر ”پرانے پاکستان“ کے بوسیدہ شہری کی ریڈیو کتھا

آج کے اس جدید دور میں بلاغ کا کوئی بھی ذریعہ چاہے جتنابھی پرانا کیوں نہ ہو گیا ہواس کی اہمیت اور افادیت سے انکار نہیں کیا جا سکتا۔ یہی صورت حال ریڈیو کے بارے میں بھی ہے۔ گزشتہ دو دہائیوں میں ہمارے نوسٹیلجیا سے جڑی بہت سی خوبصورت چیزیں قصہ پارینہ بنیں، جن میں ایک ریڈیو بھی شامل ہے۔ نجانے کتنی ہی نسلوں کا ریڈیو سے نوسٹیلجیا وابستہ ہے۔ جدید ابلاغ کی ہوشربا سہولیات میسر ہونے کے باوجود ریڈیو سماعت کرنے کا اپنا ہی ایک لطف ہے۔

ان سطور میں یہ زمین زاد ریڈیو کے حوالے سے اپنے بچپن کے رومانس کو آپ سے شیئرکرنا چاہے گا۔ ریڈیو کو ہمارے گھر میں خاص اہمیت حاصل تھی۔ ہمارا گھر شہر کے ان گنے چنے گھرانوں میں شامل تھا جہاں ڈاک خانہ سے ریڈیو کا لائسنس بنوانے کو فخر اور قانون پسندی کی علامت سمجھا جاتا تھا۔ اباجی (رسول بخش نسیم) اس سلسلے میں کوئی تساہل نہیں برتا کرتے تھے۔ اس دور میں ہمارا گھر کچا تھا۔ کچے آنگن میں کنواری مٹی کی روح پرور باس میں بسا ایک چھوٹا سا گھرجہاں سرشام ہی صحن میں چھڑکاؤ کرکے چارپائیوں کے ساتھ ایک چھوٹی سی میز پر لکڑی کے ڈبے کا ریڈیو رکھ دیا جاتاجو دن کو ابو کے کمرے میں میز پر دھرا رہتا۔

Read more

تحصیل احمد پور شرقیہ کے سرکاری سکولوں کی پکار اور آئین

تعلیم کسی بھی معاشرے کی ترقی میں بنیادی کردار اداکرتی ہے۔ اس لئے دنیا بھر کی حکومتیں اپنے شہریوں کو تعلیمی سہولیات اورمعیاری تعلیم کی فراہمی کے لئے اقدامات کرتی ہیں۔ اپریل 2010 ء میں اٹھارویں آئینی ترمیم کے ذریعے پاکستان کی پارلیمان نے دستور میں آرٹیکل 25 (اے ) کا اضافہ کیا۔ جس کے تحت معیاری تعلیم کو کسی بھی شہری کا بنیادی حق قرار دیا گیا مگراسی اٹھارویں ترمیم کے ذریعے ہی تعلیم کے اہم ترین شعبے کوصوبوں کے سپرد کرکے اس بنیادی حق کی فراہمی کو کاغذی کارروائی تک محدود کر دیا گیا۔

Read more

سرائیکی وسیب کے فنکارکس دیوار گریہ سے سر پھوڑیں؟

کسی بھی مہذب معاشرے میں فنکار، ادیب، شاعر، موسیقار، گلوکار اور اداکار کو عام انسان کے سانچے سے مختلف سمجھا جاتا ہے کیونکہ مہذب دنیا سمجھتی ہے کہ یہ لوگ وہ ”میوٹیٹیس“ ہوتے ہیں جو کسی بھی معاشرے میں اس لئے پیدا کر دیے جاتے ہیں کہ اس معاشرے کے لوگ کہیں اپنی زندگیوں کی…

Read more

بیادرفتگان رسول بخش نسیم

کئی بار قلم اٹھایا اور رکھ دیا، آنکھیں دھندلا جائیں تو لکھنا مشکل ہو جاتا ہے، کوئی زندگی کی رعنائیوں کا مرثیہ بے نم آنکھوں سے لکھ کر دکھائے تو مانوں، آخری قدم قبرستان سے باہر رکھنے لگا تو ایک بار پھر مڑ کر دیکھا، مٹی کا ایک ڈھیر سامنے تھا، تو کیا وہ رعنائی خیال، وہ تبسم، وہ تکلم، وہ علم، وہ بصیرت، وہ حسن خلق، سب پیوند خاک ہو گئے؟ کیا ان سے دائمی محرومی ہی انسان کا مقدر ہے؟ لگا دل اچھل کر سامنے آگیا ہے، دل نے چاہا کہ میں اس خاک سے مخاطب ہو کر غالب کے الفاظ میں شکوہ کروں کہ تو نے ”یہ“ گنج ہائے گراں مایہ کیا کیے؟ اداسی نے پاؤں جکڑ لئے، اللہ کا شکر کہ مرشد اقبال ؒ آگئے اور میرا ہاتھ پکڑ لیا، میں سنبھل گیا، جکڑے ہوئے قدم اٹھنے لگے، انہوں نے سرگوشی کی

Read more

ریاست ایک معاہدہ کیلے بیچنے والے بچے کے ساتھ بھی کرے

نئے پاکستان کے معماروں سے یہ توقع نہیں تھی کہ وہ مذہبی انتہا پسندوں کے سامنے اتنی آسانی سے گھٹنے ٹیک دیں گے۔تین روز تک ریاست کی رٹ سولہ سنگھار کئے شاہراہ دستور پر جھانجریں چھنکاتی رہی ۔ مذہب کے نام پر'' فساد فی سبیل اللہ'' کے علمبردار مرصع و مسجع دین فروشوں نے ریاست…

Read more

جمہوریت رے جمہوریت تیری کون سی کل سیدھی

جمہوریت کی تعریف کے حوالے سے دیکھا جائے تو کچھ کچھ، جتنے منہ اتنی باتیں، قسم کی صورتحال سامنے آتی ہے۔ پولیٹیکل سائنس کی کتابوں میں سابق امریکی صدرمسٹر ابراہام لنکن کے الفاظ میں اسے کچھ اس طرح بیان کیا جاتا ہے کہ Democracy is a government, of the people, by the people, for the…

Read more

ہیڈ پنجند کے تاریخی پل کی تین سالہ بندش کے ”منصوبے“ سے عوام کیوں خوش ہیں؟

برصغیر میں تاریخی۔ روحانی اور تہذیبی حیثیت کے حامل شہر اوچ شریف سے شمال کی جانب 12کلومیٹر کے فاصلے پر ہیڈ پنجند کا وہ تفریحی مقام واقع ہے جہاں پانچ دریاچناب۔ ستلج۔ بیاس۔ جہلم اور راوی مل کر حسین سنگم بناتے ہیں۔ ہیڈ پنجند کا افتتاح 8جون 1929ء ایجنٹ ٹو گورنر جنرل پنجاب کرنل اے…

Read more

یتیم مملکت کے یتیم وزیر اعظم کے نام، ایک یتیم پاکستانی کا خط

عالی مرتبت جناب عمران خان صاحب وزیر اعظم اسلامی جمہوریہ پاکستان آداب! ڈھیروں دعاؤں اور نیک تمناؤں کے ساتھ بارگاہِ ناز میں کچھ معروضات گوش گزار کرنے کی اجازت چاہتا ہوں۔ جناب وزیر اعظم! بطور وزیر اعظم اسلامی جمہوریہ پاکستان قیادت کے جس مقام پر آج آپ کھڑے ہیں، وہاں آپ کو قوم کے ہیرو…

Read more

ہم وہ ٹین کے ڈبے ہیں جو بس شور ہی مچاتے رہ جاتے ہیں

مگر اک عمر۔ ۔ ۔ ہم نے زندگی کو زندگی محسوس کرنے کی طلب میں۔ رائیگاں کر لی ! عشق کی داستان آج گلی گلی پھیلی ہوئی ہے، ہر دوسرا انسان اس بیماری میں مبتلا ہے، کچھ سمجھ دارایسے بھی ہیں جو دوسروں کو دیکھ کے عبرت حاصل کرتے ہیں اور یہ ’دوسرے‘ وہ لوگ…

Read more

تذکرہ ”شہرآشوب” اوچ شریف

سوالاکھ اولیائے کرام کی نگری اوچ شریف برصغیر کی ان تاریخ ساز بستیوں میں سے ایک ہے جہاں اگر ایک طرف سلطنتوں کے عروج وزوال کی داستانیں مرتب ہوتی رہیں تو دوسری طرف تہذیب و ثقافت کے ان گنت نقوش ابھرتے اور مٹتے رہے۔ اسلامی تصوف و شریعت کی شمعیں جو کفروضلالت کے تاریک گوشوں…

Read more