ناصر بشیر کے گھر چوری کی واردات اور جذبہ ایمانی

ممتاز شاعر اور کالم نگار ناصر بشیر کا تعلق ملتان سے ہے۔ وہ لاہور میں مقیم ہیں مگر ان دنوں ملتان میں شاہ شمس روڈ پر اپنے گھر میں قرنطینہ میں ہیں۔ ایسے میں ایک نامعلوم چور رات کو دیوار پھلانگ کر ان کے گھرمیں داخل ہوا اور ان کا بیگ اور ان کے گھر کے افراد کے تین قیمتی موبائل لے اڑا۔ بیگ میں 65 ہزار روپے اور قیمتی کاغذات تھے۔ ناصر بشیر کا کہنا ہے کہ انہوں علاقے کے تھانے میں ایس ایچ او کو رپورٹ کی ہے مگر نہ جانے کب ایف آئی آر درج ہو گی اور کب چور کو پکڑنے کے لیے کوئی قدم اٹھایا جائے گا۔

Read more

آپ ہی بتائیے کہ مختارا کیا کرے؟

اگرچہ ندیم افضل چن صاحب نے کورونا وائرس کے بڑھتے ہوئے پھیلاؤ کے حوالے سے نہایت موثر انداز میں ’مختیارے‘ کو سمجھایا تھا، مقدور بھر ڈرایا بھی تھا کہ گھر میں رہو، باہر نہیں نکلنا مگر مختارا سمجھتا ہی نہیں ہے۔ قصور مختارے کا بھی نہیں ہے۔ حکومت تو لاک ڈاؤن کرکے بیٹھ گئی۔ اب…

Read more

وبا کے دنوں میں محبت

ڈاکٹر سعدیہ کے دل کی دھڑکن معمول سے کچھ زیادہ تیز تھی۔ ہاسپٹل میں اس دن کام کا رش نسبتاً کم تھا۔ ڈاکٹر خرم کے کمرے کی طرف قدم بڑھاتے ہوئے اس نے دو تین بار اپنی بے ترتیب سانسوں کو نارمل کرنے کی کوشش کی مگر دل کم بخت بڑے زور دھڑک رہا تھا۔…

Read more

کورونا وائرس کو سیرئس لینے کی ضرورت ہے

کورونا وائرس کے پھیلاؤ پر ابھی تک قابو نہیں پایا جا سکا۔ معلومات کے مطابق کورونا وائرس کے اثرات 15 دن کے اندرظاہر ہوتے ہیں۔ چناںچہ اگر کوئی اس کا شکار ہو جائے تو نادانستگی میں وہ اس کے ظاہر ہونے تک بہت سے افراد کو کورونا سے متاثر کر چکا ہوتا ہے۔ یہی وجہ…

Read more

کورونا کا مقابلہ ایسے کرنا ہے

کورونا وائرس کا پھیلاؤ ہنوز جاری ہے اور اب یہ چین کے بعد اٹلی، ایران، سپین، جرمنی اور امریکہ سمیت 170 سے زیادہ ممالک کو متاثر کر رہا ہے۔ اٹلی اور ایران میں تو یہ بے قابو ہو چکا ہے۔ پاکستان میں بھی تین سو سے زائد مریض سامنے آ چکے ہیں مگر یاد رہے…

Read more

ڈاکٹراجمل نیازی: ایک سچے اور کھرے قلمکار کا المیہ

بستر علالت پر اپنی بیماری سے لڑتے ہوئے ڈاکٹر اجمل نیازی پیرانہ سالی کے باوجود عزم و ہمت کا پیکر دکھائی دیتے ہیں۔ وہ شدید بیمار ہیں اور اپنی آواز کھو چکے ہیں۔ وہ سرگوشیوں میں گفتگو کرتے ہیں۔ ان کے خاندانی ذرائع سے پتا چلا کہ ان کی آواز کھو جانے کا سبب سرکاری…

Read more

میں عورت مارچ کے خلاف ہوں

میں عورت مارچ کے خلاف ہوں کیوں کہ اس مارچ کا ہمارے سماج سے کوئی واسطہ نہیں۔ ہمارے ہاں عورتیں سڑکوں پر نعرے بازی نہیں کرتیں، آرام سے گھر بیٹھ کر گھر کے کام کاج کرتی ہیں۔ یہ تو مغرب کی عورت کے مسائل ہیں۔ ہمارا معاشرہ نہایت صالح اور پاکیزہ معاشرہ ہے۔ ہم نے عورت کو جتنے حقوق دے رکھے ہیں اتنے کسی سماج نے نہیں دیے۔ مشرق کی عورت کا تو یہ مسئلہ ہی نہیں ہے۔ ہمارا اس سے کیا لینا دینا۔

Read more

میرا قلم میری مرضی

یہ لڑکیاں بڑی چالاک ہوتی ہیں۔ ایسا جال بچھاتی ہیں کہ بھولے بھالے مرد خود بخود اس جال کی طرف کھنچتے چلے آتے ہیں۔ ”عورت مارچ“ والا معاملہ ہی دیکھ لیجیے۔ انہوں نے ایسے ایسے نعرے ایجاد کیے کہ ایک خاص نقطہ نظر کے حامل مرد نہ چاہتے ہوئے بھی چیختے چنگھاڑتے انگاروں پر لوٹنے…

Read more

ماروی سرمد بمقابلہ خلیل الرحمان قمر

ایک ٹی وی چینل پر ماروی سرمد اور خلیل الرحمان قمر کی جھڑپ اس وقت شدت اختیار کر گئی جب خلیل الرحمان قمر نے جذبات کی شدت میں ماروی سرمد پر گالیوں کی بوچھاڑ کر دی۔ یہ گفتگو عورت مارچ کے ایک نعرے ”میرا جسم میری مرضی“ کے حوالے سے ہو رہی تھی۔ خلیل الرحمان…

Read more

توبہ

نجیب عالم اور صبغت اللہ کی دوستی کافی گہری تھی۔ وہ ماڈل ٹاؤن میں رہائش پزیر تھے۔ گلی تو ایک ہی تھی مگر نجیب عالم کا گھر گلی کے شروع میں اور صبغت اللہ کا آخر میں تھا۔ نجیب عالم ایک بینکرتھے جبکہ صبغت اللہ ایک عالم تھے اور خاصے دیندار آدمی تھے۔ وہ جب…

Read more