یو ٹرن نہیں اباٶٹ ٹرن

آخر کار وزیر اعظم نے عین توقع کے مطابق آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسوسیع کر دی ہے۔ باخبر حلقوں اور راز درون خانہ سے آشنا لوگوں کے علاوہ سارا پاکستان جانتا تھا کہ جنرل باوجوہ کو توسیع دینے کا فیصلہ کیا جا چکا ہے۔ جن چند عاقبت نا اندیش اور وقت کی نبض سے نا آشنا سادہ لوح پاکستانی وزیراعظم کے پچھلے بیانات کی بنیاد پر اس توسیع میں شک و شبہ کا اظہار کر رہے تھے کہ شاید کپتان صاحب پہلی اور آخری بار یو ٹرن نہ لے کر اپنے چاہنے والوں کو سرخرو کر لیں مگر بدقسمتی سے ایسا نہ ہو سکا۔ مگر ان کو بھی امریکہ میں جنرل صاحب کی غیر معمولی پذیرائی کے مناظر دیکھ کر یقین ہو گیا تھا کہ اب مدت ملازمت میں توسیع یقینی امر ہے کیونکہ امریکہ میں تین ماہ بعد ڈوبنے والے ممکنہ ستاروں کا اس شاہانہ انداز سے استقبال نہیں کیا جاتا۔

Read more

کشمیریوں کے ساتھ اظہارِ یک جہتی کا بہترین طریقہ

رواں ہفتے ہم نے آزادی کی سالگرہ منائی۔ جدید قومی ریاستوں کے دور کے آغاز کے بعد روئے زمین پر بے شمار قومیتوں، مذہب کے ماننے والوں اور نسلوں نے خود پر اور وسائل پر مسلط و متصرف طاقتوں سے آزادی حاصل کر کے مذہب، رنگ، نسل، زبان وغیرہ کی بنیاد پر جغرافیائی اور نظریاتی سرحدوں…

Read more

دوا نہیں، دعا نہیں، اب صرف بد دعائیں

ہمار ے کلچر کی ایک بڑی خوبی یہ ہے کہ ہم نمازوں، نمازِ جمعہ اور دیگر مذہبی تقریبات کے دوران لبمی لبمی اور خشوع و خضوع سے عاری دعائیں کرنے میں ید طولٰی رکھتے ہیں۔ دعا جو خالص اللہ اور بندے کے درمیان مخلصانہ تعلق اور رابطے کا نام ہے، ہم نے اسے بھی رعایا…

Read more

کیا کشمیر کو بھول جائیں؟

کشمیر کے ساتھ ہماری جذباتی اور مثالی وابستگی کی بات الگ ہے مگر راقم نے جب بھی مسئلہ کشمیر کو اس کے مذہبی، تاریخی، روایتی اور جغرافیائی مباحث کی روشنی میں دیانتداری اور حقیقت پسندی سے دیکھنے کی کوشش کی ہے بقول منیر نیازی یہ قابل رحم، مخدوش اور تلخ صورت حال ہی سامنے آئی…

Read more

بات چل نکلی ہے اب دیکھیں کہاں تک پہنچے

میر حاصل بزنجو کی سعی کیا سعی لا حاصل ہی رہے گی یا ہماری سیاست، صحافت اور عدالت و دوسرے ادارے طاقتوروں کے زبردست اثر سے باہر نکلنا شروع ہو جائیں گے؟ انہیں بھی اس جرات رندانہ اور نعرہ مستانہ پر نواز شریف، مریم نواز، جسٹس قاضی فائز عیسٰی، محسن داوڑ، علی وزیر، جسٹس شوکت…

Read more

اپوزیشن کی شکست کے چند مثبت پہلو

سینیٹ کے چئیر مین کے خلاف متحدہ اپوزیشن کی تحریک عدم اعتماد ناکامی سے دوچار ہوئی مگر موجودہ حکومت کے چہرے سے جمہوری حکومت کی رہی سہی برائے نام ملمّع کاری کا بھرم بھی جاتا رہا۔ میری طرح بے شمار لوگوں کا یہ خیال تھا کہ اگر صادق سنجرانی ووٹنگ سے پہلے اپنی شکست کے خوف سے مستعفی نہیں ہوتے اور تادم آخریں ڈٹے رہتے ہیں تو اس کا مطلب ہے کہ اپوزیشن کے کچھ لوگ درپردہ اختیاری یا مجبوری کے عالم میں حکومت کے ساتھ رابطہ میں ہیں۔

Read more

عرفان صدیقی کیس: سیاسی منظر بدل رہا ہے

نواز دور کے کسی ادنٰی یا اعلٰی کارکن و اہلکار کے خلاف کسی امر میں معمولی سی بے ضابطگی کی بو سونگھنے والے صدق و امانت کے پُتلوں اور ان کے سر پرستوں کو جب قلم قبیلے کے سرخیل اور وزیر اعظم کے مشیر و تقریر نویس جناب عرفان صدیقی کے خلاف باوجود بسیار خجل…

Read more

کپتان کے گھبرانے کا سوال ہی نہیں پیدا ہوتا

کپتان کے حالیہ دورہ امریکہ کے دوران یار لوگوں نے کپتان اور ان کے دورے کے حوالے سے کچھ سچی اور زیادہ تر جھوٹی، من گھڑت اور خود ساختہ خبروں کا ایسا اتوار بازار لگایا کہ راقم بھی ایک لمحے کے لیے سوچنے پر مجبور ہو گیا کہ ا امریکہ چودہ سو بیانوے میں اطالوی…

Read more

نیا پاکستان یا اسلامی جمہوریہ تضادستان

جج ارشد ملک کی ویڈیو کے بعد جس طرح حکومت نے ریاستی اداروں کو نواز شریف فیملی کے خلاف استعمال کر کے اپنے انتقام اور بغض کی آگ کو ٹھنڈا کرنے کی کوشش کی گئی ہے، اس سے فاشسٹ حکومت اور جناب وزیراعظم کی آمرانہ اور منتقم مزاج شخصیت کے گھناؤنے اور سازشی پہلو تو…

Read more

ایک نہیں دو پاکستان

قارئین کو یاد ہو گا کہ جب عالمی میڈیا میں پانامہ کا شور اٹھا تو عمران خان وہ پہلے آدمی تھے جنہوں نے بڑی شدو مد اور تسلسل کے ساتھ ہر فورم پر یہ آواز بلند کی تھی کہ کیونکہ ملک کے وزیر اعظم پر کرپشں ن کے الزامات لگ چکے ہیں اس لیے انہیں…

Read more