اومارسکا کی اسٹرابیری

یوگوسلاویہ میں خانہ جنگی شروع ہوچکی تھی۔ بہشت نما خوبصورت ہرنچی شہرمیں سرب دوسری نسل کے لوگوں کی مار دھاڑ کر رہے تھے اور ان کو اٹھا اٹھا کر کیمپوں میں لے جا رہے تھے۔ سلام اور عذرا گھر چھوڑ کر شہر سے باہر ایک رشتے دار کے فارم میں چھپ گئے۔ لیکن ایک رات…

Read more

شکست کی قیمت

ولیڈن کی زندگی کا اب ایک ہی مقصد تھا کہ کسی طرح وہ نطاشہ کو ڈھونڈ نکالے اور دوبارہ وہ دن واپس آجائیں جب وہ دونوں اکٹھے تھے۔ اس نے ہر فوجی کیمپ، پولیس اسٹیشن، اور جیل کا دروازہ کھٹکھٹایا۔ وہ شہر کے سب با اثر اشخاص سے ملا۔ سرکاری ملازموں، فوجی افسروں اور وزیروں…

Read more

فتح کی قیمت

”انگلیاں! انُ کے نشانات! میں کہاں سے لاؤں؟ انہی کو بچانے کے لئے مجھے پاسپورٹ کی ضرورت ہے۔ یہ لوگ کب تک فتح کا جشن منائیں گے؟ “ حارث فٹ پاتھ پر نا جانے کب سے کھڑا خود سے باتیں کر رہا تھا اور اس کی نظر بار بار اپنی انگلیوں پر جا کر ٹک…

Read more

67 الفاظ کے وزن کے نیچے دبی ہوئی دنیا

جب یہ 67 الفاظ لکھے گئے تو لکھنے والے کو بھی یقیناً اس کا اندازہ نہیں ہوگا کہ اس مختصر تحریر کا نتیجہ اس کی سوچ کی وسعتوں سے کہیں زیادہ ہو گا۔ اگر ہم دنیا کی سیاست اور معیشت پر ان 67 الفاظ پر مشتمل اعلامیہ کا اثر دیکھیں تو اس کی نظیر تاریخ…

Read more

آزاد نگاہیں

رشیدہ کو نقاب پہننے سے سخت نفرت تھی لیکن وہ اپنے شوہر عمران کے اصرار پر گھر سے باہر برقعہ اور نقاب کی پابندی کرتی تھی۔ آج اچانک عمران نے رشیدہ کو بتایا کہ اسے نقاب سے منہ ڈھانکنے کی ضرورت نہیں ہے۔ لیکن رشیدہ نے جواب دیا کہ وہ نقاب پہن کر ہی باہر جائے گی۔ کل اس کو نقاب نے جو آزادی بخش دی تھی اسے وہ کسی بھی صورت میں کھونا نہیں چاہتی تھی۔ پھر رشیدہ کو ایک دم خیال آیا کہ شاید کل عمران نے اس کی حرکت کو نوٹ کر لیا تھا۔

Read more

سوال بستی میں چھپے مفرور شخص کی حکایت

’کیا یہی سوال نامی بستی ہے؟ ‘ ’آ جاؤ آ جاؤ کیا تمہیں بھی نکال دیا ہے؟ ‘ ’ہاں، انہوں نے مجھے شہر بدر کر دیا ہے۔ ‘ ’یہاں کچھ شہر سے نکالے ہوئے باسی رہتے ہیں۔ لیکن تم تو ابھی بالکل نوجوان ہو تمہیں کیوں نکال دیا؟ ‘ ’میں نے اسکول میں ایک سوال…

Read more

کیا میں ایک شخص ہوں؟

”اگر میں شخص نہیں ہوں تو کیا ہوں؟ “آٹھ سالہ منیر کے ذہن میں ایسے سوالات نے مستقل ڈیرا ڈالا ہوا تھا اور جب وہ سارے دن کی تھکن کے ساتھ بستر پر لیٹتا تو یہ الجھنیں اس کو نیند کی آغوش میں جانے سے روکنے کی کوشش کرتیں۔ لیکن آج اسے اتفاقاً اس سوال کا جواب مل گیا تھا کہ وہ اگر ایک شخص نہیں ہے تو کون ہے۔

Read more

پنجرہ

1948 میں فلسطینیوں کے جبری انخلا کی یاد میں منائے جانے والے دن النکبة ( 15 مئی) کے نام۔دو دن سے قلقیلیہ میں کرفیو عائد تھا۔ عبدالعزیز نے دوسرے روز شام کو کلثوم اور دونوں بچّوں کے ساتھ کھانا کھایا اور سوچ میں پڑ گیا کہ چڑیا گھر میں اس کے دوسرے بچّے دو دن سے بھوک پیاس سے تڑپ رہے ہوں گے۔ اس کو ہر صورت میں چڑیا گھر پہنچنا ہے۔ اگلی صبح پو پھوٹنے سے پہلے ہی کلثوم کو بتاے ٔ بغیر وہ گھر سے نکل گیا۔ اس کو پتہ تھا کہ اگر کسی فوجی نے دیکھ لیا تواس کو وہیں گولی مار دی جاے ٔگی۔ لیکن آج وہ چڑیا گھر ضرور جائے ٔ گا پچھلی گلیوں سے چھپتے چھپاتے۔

Read more

جنگل کی ادی واس دیوی کالارتری کیوں نہ بن سکی؟

آج صبح تک میں نیلم تھی اور میں روز جنگل کی دیوی کالارتری سے ہم ادیواسیؤں کی جان و مال کی حفاظت کے لئے پوجا کرتی تھی۔ پھر میں خود کالارتری بن گئی، درگا کا ساتواں اور پرتشدّد روپ۔ لیکن کیا میں اس دیوی کا منصب نبھا سکتی ہوں؟ مجھے وہ دن کبھی نہیں بھول…

Read more

چترال کی ٹافی

دلشاد کو اپنی ماں اور بھائی بہن بے انتہا یاد آ رہے تھے۔ اس کا دل چاہ رہا تھا کہ وہ اپنی ماں سے لپٹ کر خوب روئے اور اتنا روئے کہ یہ دنیا اس کے آنسوؤں میں ہمیشہ کے لئے بہ جائے۔ گیٹ بند ہونے کی آواز نے اس کے انگ انگ کو ہلا…

Read more